Wednesday , January 17 2018
Home / Ahmad Faraz / Rog Aisy Bhi Gham e Yaad Se Lag Jaaty Hain – Full Ghazal

Rog Aisy Bhi Gham e Yaad Se Lag Jaaty Hain – Full Ghazal

Rog Aisy Bhi Gham e Yaad Se Lag Jaaty Hain - Full Ghazal
روگ ایسے بھی غمِ یار سے لگ جاتے ہیں​
در سے اُٹھتے ہیں تو دیوار سے لگ جاتے ہیں​
عشق آغاز میں ہلکی سی خلش رکھتا ہے​
بعد میں سینکڑوں آزار سے لگ جاتے ہیں​
پہلے پہلے ہوس اک آدھ دکاں کھولتی ہے​
پھر تو بازار کے بازار سے لگ جاتے ہیں​
بے بسی بھی کبھی قربت کا سبب بنتی ہے​
رو نہ پائیں تو گلے یار سےلگ جاتے ہیں​
کترنیں غم کی جو گلیوں میں اڑی پھرتی ہیں​
گھر میں لے آؤ تو انبار سے لگ جاتے ہیں​
داغ دامن کے ہوں، دل کے ہوں کہ چہرے کے فرازؔ​
کچھ نشاں عمر کی رفتار سے لگ جاتے ہیں

About admin

Check Also

Ik Tery Khawb Se Jab Kabhi Jaagon Ro’on – Urdu Ghazal

اک ترے خواب سے جب بھی کبھی جاگوں، روؤں پھر ترے بارے کہیں بیٹھ کے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *